الیکشن کمیشن نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر پھر تحفظات کا اظہار کر دیا

Jan 18, 2022 | 19:48:PM
 الیکشن کمیشن ۔لیکٹرانک، ووٹنگ مشین، ہیک۔جام۔ خدشہ 
کیپشن:  الیکٹرانک ووٹنگ مشین 
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

 (24نیوز)الیکشن کمیشن نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ہیک اور جام ہونے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسی لئے بعض ممالک نے اس پر پابندی عائد کی ہوئی ہے۔

سینیٹر تاج حیدر کی زیر صدارت پارلیمانی امور کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں الیکشن کمیشن سے متعلق امور زیر بحث آئے۔

سیکریٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ ای وی ایم کے ہیک ہونے اور جام ہونے کا رسک ہے، اس حوالے سے کمیٹیاں تشکیل دی گئی ہیں جو ان تمام نقائص اور رسک کا جائزہ لے رہی ہیں، بعض ممالک نے ای وی ایم پر پابندی عائد کر رکھی ہے اس لئے ای وی ایم کے استعمال کے لئے اتفاق رائے ضروری ہے۔رکن کمیٹی کامران مرتضیٰ نے سوال کیا کہ ای وی ایم مشینوں پر اتنا خرچہ آتا ہے آپ نے پہلے حکومت کو کیوں نہیں بتایا؟ جواب میں سیکریٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ حکومت ہم سے پوچھتی تو ضرور بتاتے۔

دریں اثناکمیٹی میں سب سے زیادہ جینڈر گیپ پنجاب میں ہونے کا انکشاف ہوا۔ الیکشن کمیشن حکام نے سینٹ کمیٹی کو بریفنگ دی کہ چاروں صوبوں میں ڈور ٹو ڈور رجسٹریشن کی گئی۔ رکن کمیٹی فاروق ایچ نائیک نے بتایا کہ پڑھے لکھے پنجاب میں جینڈر گیپ سب سے زیادہ ہے۔بلوچستان کے ارکان سینٹ نے ووٹ رجسٹریشن سے متعلق تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ بلوچستان میں خواتین کے شناختی کارڈ نہیں بنائے جا رہے، نادرا حکام کو طلب کیا جائے۔تاج حیدر نے کہا کہ ہمیں بار بار کہا گیا کہ نادرا کو نہ بلائیں، ایک ایک منٹ پر نادرا سے متعلق سوال پیدا ہو رہا ہے لیکن جو ہمیں نوٹی فکیشن دیا گیا اس میں کہا گیا ہے کہ نادرا کو نہ بلائیں، میں چیئرمین سینٹ سے اس معاملے پر بات کروں گا۔

 یہ بھی پڑھیں۔ اومی کرون کا پھیلاﺅ۔۔ محکمہ تعلیم کی والدین کیلئے اہم ہدایات