وطن واپسی۔۔ شیخ رشیدکی نواز شریف کوبڑی پیش کش

Dec 26, 2021 | 18:26:PM
نواز شریف ۔پیشکش۔ویزا۔کرپٹ۔پریس کانفرنس
کیپشن: وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد (فائل فوٹو)

 (24نیوز)وفاقی وزیرِ داخلہ شیخ رشید احمد نے کہاہے کہ نوازشریف کو 24 گھنٹوں میں پاکستان آنے کا ویزہ دوں گا، ان کو اپنی جیب سے ٹکٹ کی آفر کرتا ہوں، ان کے خاندان کے 3 لوگ یہاں ہیں، وہ بھی آ جائیں، عمران کہیں نہیں جارہے اپنی مدت پوری کریں گے، بلدیاتی انتخابات میں پی ٹی آئی نے کم ووٹ نہیں لئے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کو مقامی ہوٹل میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شیخ رشید نے کہا کہ حکومت سے کسی کا ہاتھ نہیں ہٹا، ادارے 20 دن نہیں 20 سال کی پالیسیاں بناتے ہیں، کوئی عقل کا اندھا اگر یہ سوچ رہا ہے کہ کسی ایک شخص کی پالیسی ہوتی ہے تو ایسا نہیں ہے، ادارے کی پالیسی ہوتی ہے، اداروں کے تھنک ٹینک طویل المدتی پالیسی بناتے ہیں۔ جو افسر میرے محکمے میں روٹیشن پالیسی پر نہیں جائیں گے انہیں نکال دوں گا، میں نے فیصلہ کیا ہے کہ ہر ادارے میں مہینے میں ایک دن میں خود بیٹھوں گا۔انہوں نے کہاکہ آصف زرداری نے کہا کہ میں لاہور میں ٹینٹ لگانے لگا ہوں، آصف زرداری صاحب آپ کے اور میرے ٹینٹ اکھڑنے کا وقت آ گیا ہے، نواز شریف اور زرداری خاندان کرپٹ ہیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے 7 روزہ دورے پر آﺅں گا، لوگوں کی تکالیف کو خود کم کروں گا، یہاں پتہ نہیں حلقہ بندی ہوئی یا نہیں ، یہاں کے شہریوں کے لیے پیپلز پارٹی نے کیا کیا ہے؟ مراد علی شاہ سے کہوں گا کہ مرکز کے ساتھ مل کر کام کریں۔وفاقی وزیرنے کہاکہ نواز شریف بیماری کا بہانہ کر کے بیرون ملک گئے، ان کی صحت بالکل ٹھیک ہے اور وہ صحت مند ہیں کیونکہ انہوں نے کسی ڈاکٹر کو نہیں دکھایا اور نہ ہی کہیں سے علاج کرایا ہے، نوازشریف کے پاس اداروں کے خلاف باتیں کرنے کے علاوہ کچھ نہیں۔ شہبازشریف کا نام احترام سے لوں گا، انہوں نے کہا کہ ہمارا ہاتھ اور ان کا گریبان ہو گا، ان جیسے چور ہمارے گریبانوں میں ہاتھ نہیں ڈال سکتے، شکلیں دیکھیں یہ اپنی، ان جیسی کرپشن کسی کی نہیں، جتنی کرپشن کے کیسز ان پر ہیں کسی پر نہیں ہیں، ان کے خاندان کے 3 لوگ سیاست کر رہے ہیں، چوتھا بھی کر لے۔

انہوں نے کہاکہ لوگ ہمیں الزام دے رہے ہیں کہ ہماری وجہ سے سب ہو رہا ہے لیکن ہوا ان ہی وجہ سے ہے، ہماری غلطی یہ ہے کہ ہم وضاحت نہیں دے سکے۔انہوں نے کہا کہ وزیرِ اعظم عمران خان آخری سانس تک کرپشن زدہ سیاست کے خلاف لڑائی لڑتے رہیں گے، ان کے دورمیں او آئی سی کی کامیاب کانفرنس ہوئی۔ تمام مسلم دنیا عمران خان کی زبان پر متفق ہوئی۔ایک سوال پر وزیر داخلہ نے کہا کہ بانی متحدہ کو میں زمانہ طالبِ علمی سے جانتا ہوں، ان سے بات چیت نہیں ہو سکتی، ان کے اوپر بہت سے قتل و غارت گری کے مقدمات ہیں، ایم کیو ایم کے ساتھ تعلقات آج بھی ہیں اور کل بھی ہوں گے، یہ لوگ جی ایچ کیو کے گیٹ نمبر 4 کی پیداوار ہیں، ان لوگوں نے وہاں جا کر ٹارزن بننے کی کوشش کی، مگر ٹھس ہو گئے، جو نام لے کر لندن سے باتیں کرتے تھے ان پر سے ہاتھ اٹھ گیاہے۔جبکہ میں پاکستان کی عظیم افواج سے تعلق رکھنا اپنے لئے اعزاز سمجھتا ہوں۔وفاقی وزیر نے کہا کہ ٹی ٹی پی کے ساتھ بالواسطہ رابطے ہیں، براہ راست نہیں، چاہتے ہیں کہ سرحد پر خاردار تاڑیں لگانے کا کام باہمی اشتراک سے مکمل ہو۔انہوں نے کہا کہ افغانستان کی موجودہ صورتحال کی وجہ سے ہم نے پوری دنیا کو پاکستان میں مدعو کیا اور ہم طالبان کی مدد کرنا چاہتے ہیں، طالبان نے یقین دلایا کہ ان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی۔شیخ رشید نے کہا کہ پچھلے سال بیمار ہوا تو احساس ہوا کہ دوائیں مہنگی ہیں، میرے جیسا صاحبِ حیثیت بھی دوائیں افورڈ نہیں کر سکتا، چینی چوروں نے سبسڈی لی، چینی بھی یہیں رکھی، مافیاز کی جڑیں اتنی لمبی ہیں کہ ان پر ہاتھ نہیں ڈالا جا سکتا۔وزیرِ داخلہ نے کہا کہ ملک الیکشن کی طرف جا رہا ہے، بلدیاتی الیکشن کے بعد ملک کو 4 سال مکمل ہو جائیں گے، پانچواں سال انتخابات کا ہوتا ہے، 40 فیصد ووٹ امیدوار کا ہوتا ہے، باقی امیدوار کو محنت کرنا ہوتی ہے، قوم نے جو ووٹ دیئے تھے اس میں چوروں کو سزا دینی تھی، میں اتفاق کرتا ہوں کہ ہم اس میں ناکام رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس ملک میں نظامِ اسلام کی طاقت سے انحراف نہیں کیا جا سکتا، آپ کسی بھی مکتب کے عالمِ دین ہوں میں آپ کا نام احترام سے لوں گا، میرا حلقہ پاکستان کا حساس ترین حلقہ ہے، میں پاکستان کی عظیم فوج سے تعلق رکھنا اعزاز سمجھتا ہوں، مودی مسلمانوں کی قتل و غارت گری کا منصوبہ بنا رہا ہے۔خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں پی ٹی آئی کو ناکامی سے متعلق انہوں نے کہا کہ جمہوریت کا حسن ہے کہ کوئی زیادہ ووٹ لیتا ہے کوئی کم، خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں تحریک انصاف نے کم ووٹ نہیں لیے لیکن ان کے اپنے مسائل ہیں جس پر وہ بہتر تبصرہ کر سکتے ہیں۔کراچی کے شہریوں کو گرین لائن بس سروس کی مبارک باد دیتے ہواکہاکہ کراچی میں بسوں کی چھتوں پر لوگ بھیڑ بکریوں کی طرح بیٹھے دیکھے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں۔فاروق ستار سے ملاقات کب، کیسے اور کہاں ہوئی؟ حریم شاہ نے سارا کچا چٹھا کھول دیا