سپریم کورٹ ؛اٹارنی جنرل کی تعیناتی سے متعلق ریکارڈ طلب کرنے کا تحریری حکمنامہ جاری 

Jan 13, 2023 | 17:56:PM
سپریم کورٹ، اٹارنی جنرل، تعیناتی، ریکارڈ طلب،
کیپشن: سپریم کورٹ آف پاکستان
Stay tuned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

(24 نیوز)سپریم کورٹ آف پاکستان نے اٹارنی جنرل کی تعیناتی سے متعلق ریکارڈ طلب کرنے کا تحریری حکمنامہ جاری کر دیا،تین صفحات پر مشتمل حکمنامہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے تحریر کیا۔

حکمنامہ میں کہاگیاہے کہ اشتر اوصاف نے بطور اٹارنی جنرل کچھ ماہ قبل استعفیٰ دے دیا تھا،کافی وقت گزرنے کے باوجود نیا اٹارنی جنرل تعینات نہیں کیا گیا، ڈپٹی اور ایڈیشنل اٹارنی جنرل سادہ سوال کا جواب بھی نہ دے سکے کہ اٹارنی جنرل کون ہیں۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہاکہ اٹارنی جنرل آئینی عہدہ ہے جسے خالی نہیں چھوڑا جا سکتا،آئین میں کسی قائمقام اٹارنی جنرل کی کوئی گنجائش نہیں، قانون کے مطابق معاونت کیلئے اٹارنی جنرل کو نوٹس کیا جاتا ہے کسی ڈپٹی کو نہیں،ایڈیشنل اور ڈپٹی، اٹارنی جنرل کے متبادل نہیں ہو سکتے۔

حکمنامہ میں مزید کہاگیا ہے کہ ایڈیشنل اور ڈپٹی اٹارنی جنرل اٹارنی جنرل کی ہدایت پر ہی عدالت آتے ہیں، آئندہ سماعت پر سیکرٹری قانون اور جو بھی اٹارنی جنرل ہوں حاضری یقینی بنائیں۔

یاد رہے کہ جسٹس قاضی فائز عیسی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے 11 نومبر کو جائیداد سے متعلق مقدمے میں حکم دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: روس سے پیٹرولیم مصنوعات اور گیس کی خریداری سے متعلق بڑی پیش رفت