وزیراعظم اورصدرسے سعودی وزیر خارجہ کی ملاقاتیں۔اقتصادی تعلقات کے فروغ پر زور

Jul 27, 2021 | 20:31:PM
وزیراعظم اورصدرسے سعودی وزیر خارجہ کی ملاقاتیں۔اقتصادی تعلقات کے فروغ پر زور

(24نیوز)وزیر اعظم عمران خان اور صدر ڈاکٹر عارف علوی سے سعودی وزیر خارجہ فیصل بن فرحان السعود نے علیحدہ علیحدہ ملاقات کیاور دو طرفہ امور پر تبادلہ خیال کیا۔

تفصیلات کے مطابق صدر عارف علوی سے سعودی وزیر خارجہ کی ملاقات میں پاکستان اور سعودی عرب کے مابین تمام شعبوں میں تعلقات کی موجودہ سطح کو وسعت دینے کی ضرورت پر زور دیا گیا، ملاقات کے حوالے سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا کہ تجارت، معیشت کے شعبے میں مزید پیش رفت کیلئے دوطرفہ تعلقات کو ادارہ جاتی سطح پر استوار کرنے کی ضرورت ہے۔

 صدر مملکت نے کہاپاکستان سعودی عرب کے ساتھ تعلقات کو خصوصی اہمیت دیتا ہے اور برادر ملک کے ساتھ معاشی اور تجارتی تعلقات بڑھانے کا خواہاں ہے، سعودی قیادت کا وژن 2030ء سرسبز سعودی عرب اور سرسبز مشرق وسطیٰ منصوبے لائقِ تحسین ہیں ۔انہوں نے کہا کورونا کے دوران پاکستانی کمیونٹی کا خیال رکھنے پر سعودی قیادت کے شکر گزار ہیں، عالمی وبا کے دوران حج کے کامیاب انتظامات پر سعودی حکومت مبارکباد کی مستحق ہے، صدر مملکت نے ملاقات میں بھارتی مقبوضہ جموں و کشمیر میں معصوم مسلمانوں پر بھارتی ظلم و ستم پر روشنی ڈالی ، اعلامیہ بین الاقوامی برادری کشمیر میں بھارتی انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں رکوائے، اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کو خود ارادیت دے، انہوں نے کہا کہ آپ خادمین حرمین شریفین، شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور شہزادہ محمد بن سلمان تک میری نیک تمنائیں پہنچائیں ۔ امید ہے کہ سعودی وزیر خارجہ کے دورے سے دو طرفہ تعلقات مزید مضبوط ہو ں گے۔

سعودی وزیر خارجہ نے اس موقع پر کہا کہ سعودی عرب دو طرفہ تعاون کی موجودہ سطح کو برقرار رکھنے کا خواہاں ہے، سعودی قیادت پاکستان کے ساتھ تعلقات کو خصوصی اہمیت دیتی ہے، دونوں برادر ممالک کے مابین اقتصادی تعلقات مزید فروغ دینے کی ضرورت ہے۔

 دریں اثنا وزیراعظم عمران خان سے بھی سعودی وزیر خارجہ پرنس فیصل بن فرحان نے ملاقات کی، ملاقات کے دوران پاک سعودی تعلقات اور مختلف شعبوں میں تعاون کو تیز کرنے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیراعظم نے سعودی فرمانروا شاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا اور سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کی فلاح کے لیے سعودی حکومت کے کردار کی تعریف کی۔سرکاری اعلامیہ کے مطابق وزیراعظم نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو مزید مضبوط کرنے کے لئے باہمی تعاون کی نئی راہیں تلاش کرنے، تجارت، سرمایہ کاری اور توانائی کے شعبوں میں وسیع امکانات کو سمجھنے کے لئے اقدامات کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ملاقات کے دوران عمران خان نے سعودی، پاکستان سپریم کوآرڈینیشن کونسل کے کام کی تعریف کی، وزیر اعظم نے دونوں ممالک کی ترقی میں سعودی عرب میں پاکستان کی برادری کے اہم کردار کو سراہا۔ملاقات کے اعلامیہ کے مطابق وزیراعظم نے کووڈ سے وابستہ سفری پابندیوں کی وجہ سے پاکستانی شہریوں کو درپیش مشکلات کا ذکر کیا، وزیراعظم نے سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کو کووڈ ویکسین کی انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا، دونوں ممالک اور جنوبی ایشیا میں کووڈ کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اعلامیہ کے مطابق ملاقات کے دوران افغانستان کی صورتحال پر بھی گفتگو کی گئی، وزیراعظم نے افغان جماعتوں کے مابین تعمیری بات چیت کی ضرورت پر زور دیا، افغانستان میں امن خطے میں امن و استحکام کے لئے انتہائی ضروری تھا۔

سعودی وزیرخارجہ نے سعودی وفد کا پرتپاک خیرمقدم کرنے پر وزیر اعظم کا شکریہ ادا کیا۔ سعودی وزیرخارجہ نے اسٹریٹجک تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا، سعودی عرب جموں و کشمیر پر او آئی سی رابطہ گروپ کا رکن ہے ، سعودی عرب کشمیری مقصد کے لئے مستقل طور پر اس کی حمایت کرتا ہے۔سعودی وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تعلقات مضبوط اور اخوت پر مبنی ہیں۔ملاقات کے دوران عمران خان نے کہا کہ دونوں ممالک کی عوام کے درمیان مضبوط روابط نے دوطرفہ تعاون کی ٹھوس بنیادیں بنانے میں مدد کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔آزاد کشمیر کا وزیراعظم کون ہو گا ؟ فیصلہ ہو گیا