تحریک عدم اعتماد کا تیا پانچہ کیسے ہوا ۔وزیراعظم نے اندرونی کہانی بیان کر دی

Apr 03, 2022 | 20:50:PM
 تحریک۔ عدم اعتماد۔ناکام ۔وزیراعظم۔ اندرونی ۔کہانی ۔بیان
کیپشن: عمران خان فائل فوٹو
Stay tunned with 24 News HD Android App
Get it on Google Play

 (24نیوز)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جب ملک کی اعلیٰ سطح کی سکیورٹی باڈی بیرونی سازش کی تصدیق کردیتی ہے تو پھر اس کے بعد نمبر گیم اور تحریک عدم اعتماد پر کارروائی بے معنی تھی۔

وزیر اعظم عمران خان نے پارٹی رہنماﺅں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ روز جب میں شام کو آیا تھا تو مجھے آپ کو کہنا پڑا تھا کہ گھبرانا نہیں ہے، اب میں آپ کو تفصیل سے سمجھانا چاہتا ہوں کہ ہوا کیا ہے کیونکہ اپوزیشن کو تو ابھی تک سمجھ نہیں آرہی کے یہ ہوا کیا ہے؟۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی نیشنل سکیورٹی کونسل نے واضح طور پر کہا تھا کہ اس خط میں بیرونی سازش ہے، جو پیغام ہمارے سفیر کو دیا گیا وہ نیشنل سکیورٹی کونسل کی میٹنگ میں زیربحث آیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ نیشنل سکیورٹی کونسل میں ہمارے سارے سکیورٹی چیف سمیت سب بیٹھے ہوئے تھے، وہاں ان کے سامنے امریکا میں پاکستان کے سفیر اور امریکا کی جانب سے ان کے نمائندے کے آفیشل میٹنگ کی تفصیلات شیئر کی گئیں، اس گفتگو میں اس بات کی تصدیق کی گئی کہ یہ پلان باہر سے بنا تھا جس کے تحت پاکستان کی اندرونی سیاست میں مداخلت کی گئی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں جو لوگ چھوڑ کر گئے اور لوٹا ہوئے ان سے سفارتخانے کے لوگ ملتے تھے، ان کا کیا کام تھا؟ اس سب کا تعلق تحریک عدم اعتماد سے تھا۔وزیراعظم نے کہا کہ جب ملک کی اعلیٰ سطح کی سکیورٹی باڈی یہ تصدیق کردیتی ہے تو پھر اس کے بعد نمبر گیم اور تحریک عدم اعتماد پر کاروائی بے معنی تھی۔انہوں نے کہا کہ میں آپ کو یہ باتیں رات بتا نہیں سکتا تھا کیونکہ اگر میں گزشتہ روز سب کو بتادیتا تو وہ صدمے میں نہ ہوتے۔

خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان کے خلاف اپوزیشن نے 8 مارچ کو تحریک عدم اعتماد جمع کرائی تھی جس پر اتوار کو ووٹنگ متوقع تھی تاہم اجلاس شروع ہوتے ہیں وقفہ سوالات میں بات کرتے ہوئے وزیر قانون فواد چودھری کی جانب سے قرارداد پر سنگین اعتراضات اٹھائے گئے۔جس کے بعد ڈپٹی اسپیکر نے عدم اعتماد کی تحریک کو آئین و قانون کے منافی قراد دیتے ہوئے مسترد کردیا اور اجلاس غیر معینہ مدت تک کے لئے ملتوی کردیا۔

یہ بھی پڑھیں۔ آئینی بحران پر از خود نوٹس۔۔کوئی ادارہ غیر قانونی قدم نہ اٹھائے۔۔چیف جسٹس