جنرل راوت حادثے کے بعد کیا مانگتے رہے؟ عینی شاہد کا اہم بیان 

Dec 09, 2021 | 19:46:PM
زندہ شخص، پانی مانگ رہا تھا، اعلیٰ حکام
کیپشن: جنرل بپن راوت، فائل فوٹو

 (ویب ڈیسک) بھارتی فضائیہ کے ہیلی کاپٹر کو پیش آنے والے حادثے میں بھارت کے پہلے چیف آف ڈیفنس سٹاف جنرل بپن راوت سمیت 13 افراد ہلاک ہوگئے۔

بھارتی ٹی وی کے مطابق بھارتی میڈیا پر جائے حادثے پر موجود ایک عینی شاہد کابیان سامنے شائع کیا گیا جس میں اس کا کہنا تھا کہ جب ہیلی کاپٹر گرا تو اس لمحے درختوں میں آگ بھڑک اٹھی اور مقامی لوگ آگ بجھانے بھاگے۔عینی شاہد شیو کمار نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ہم نے اس وقت 3 ا فراد کو دیکھا جن میں سے ایک زندہ تھا اور 2 مرچکے تھے ، زندہ شخص ہم سے پانی مانگ رہا تھا جسے بعد ازاں وہاں موجود اعلیٰ حکام اٹھا کر لے گئے۔

شیور کمار کے مطابق بعد ازاں کسی نے بتایا کہ جو شخص ہم سے پانی مانگ رہاتھا وہ بھارت کے چیف آف ڈیفنس جنرل بپن راوت تھے۔مقامی شخص کا کہنا تھا کہ مجھے یقین نہیں آرہا تھا کہ وہ وہی بپن راوت تھے جنہوں نے ملک وقو م کیلئے اتنا کچھ کیا اور وہ آج ہم سے پانی مانگ رہے تھے، اس واقعے کے بعد میں رات بھر نہ سو سکا۔

یہ بھی پڑھیں: برہنہ ویڈیو کس نے بنائی۔۔؟کسی کو فرق نہیں پڑتا۔۔گندی ویڈیو تو میری بنی۔۔۔خواتین ڈانسرروپڑیں